Monday, 23 April 2012

♥ کاغذ پہ ♥

وہ لکھ رہا ہے میرا انتظار
کاغذ پہ
میں جا رہا ہوں سمند کے پار
کاغذ پہ
محبتں جو لکھی تھیں
مٹا ہی دیں آخر
لکھا ہے اب کےدل کا غبار
کاغذ پہ
جدا ہوئے تو جدائی میں
اب یہ مقام آیا
نہیں رہا ہے اسے اعتبار
کاغذ پہ
جو مقام محبت میں ہم پہ
گزری ہے راشد
نہیں رہا ہے اب اختیار
کاغذ پہ

شاعر: رانا راشد وجدان
23۔01۔2012

No comments:

Post a comment