Wednesday, 11 July 2012

اسلام اور انٹرنیشنل سروے پاکستان


پاکستان کے 87فیصد عوام القاعدہ کے خلاف ہیں
تاہم
82فی صد افراد کا خیال ہے کہ ملکی قوانین قرآن کی تعلیمات کے مطابق ہونے چاہییں۔
امریکی ادارے پیو ریسرچ سینٹر کی جانب سے 6بڑے مسلم ممالک میں کرائے گئے سروے کے مطابق مسلم عوام کی اکثریت انتہا پسندی کے خلاف ہے۔
پاکستان میں صرف 13فیصد افراد القاعدہ کی حمایت کرتے ہیں جبکہ
مصر کے 19فیصد اور
تیونس کے 16فیصد افراد القاعدہ کے نظریات سے اتفاق کرتے ہیں۔
تاہم پاکستان کے 82فیصد عوام چاہتے ہیں کہ ملک کے قوانین قرآنی احکامات کی روشنی میں بنائے جائیں۔
اردن کے 72 فیصد اور
مصر کے 60 فیصد افراد نے بھی انھیں خیالات کا اظہار کیا۔
ترکی میں مذہب پسندوں کی تعداد سب سے کم ہے اور صرف 17 فیصد ترک اسلامی قوانین چاہتے ہیں۔

پیو ریسرچ کی سروے رپورٹ میں یہ بھی کہا گیاہے کہ مسلم ممالک کے عوام کی اکثریت جمہوریت کی حامی ہے۔
84فیصد لبنانی،
71فیصد ترک،
67فیصد مصری اور
42فیصد پاکستانی اپنے ملکوں میں جمہوریت کا فروغ چاہتے ہیں۔

No comments:

Post a comment